بہاول نگر کیلۓ خوشخبری احمد جواد

824
.

آصف شریف صاحب کے زرایت پر ویژن نے مجھے بہت متاثر کیا۔ اب میں اس بات پر یقین رکھتا ھوں کی پاکستان کی اقتصادی حالت کم ترین وقت میں صرف زراعت سے ممکن ھے۔اور زراعت میں بھی صرف اس صورت میں اگر ھم آصف شریف صاحب کے زراعی ویژن کو اپنائیں۔ ہمیں فرسودہ زرعی طریقوں کو چھوڑنا ہو گا۔ میں نے آصف شریف صاحب سے بہاول نگر میں زرعی یونیورسٹی قائم کرنے پر مشورہ مانگا۔ انہوں نے بتایا کیا موجودہ ینورسٹیاں زراعت میں کوئ کردار نہیں ادا کر سکی ہیں۔

آصف شریف صاحب نے اس کی بجاۓ زرعی ٹریننگ فارم کی تجویز دی جسکا آغاز فیصل آباد اور لاھور میں ھو چکا ہے۔ اس ٹریننگ فارم سے زرعی تکنیک، زرعی بزنس مین، زرعی ٹریننگ، زرعی پیداوار میں اضافہ ممکن ہے۔ دیہی علاقوں میں نوکریاں پیدا ھوں گی۔اس ملک کی تقدیر بدلے گی۔ اور انشااللہ اسی سے مستقبل میں زرعی یونیورسٹی کی بنیاد بھی پڑے گی

میں نے اور آصف شریف نے اصولی طور پر فیصلہ کر لیا ہے کہ جنوبی پنجاب میں ایسا ٹریننگ فارم بہاول نگر میں قائم کیا جاۓ گا۔

بہاول نگر کے کاشت کاروں کا تعاون درکار ہو گا۔ حکومت سے بھی مدد کی درخواست کریں گے۔

بہاول نگر میں بڑے قابل، پڑھے لکھے نوجوان موجود ہیں جو اس خواب کو حقیقت میں بدلنے میں مددگار ثابت ہو سکتے ہیں۔

انشااللہ جلد ھی اس پر مشاورت کا عمل شروع کر رہے ہیں۔