Why Accountability of Prime Minister for Panama Leaks is a Discriminatory Action?

849

By AHMAD JAWAD


Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ” Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/


We have this great desire to undertake investigation of Panama Leaks & accountability of PM. Will it be appropriate to make one more demand that Former Army Chief General Kayani & his brothers may also be investigated for making Billions. Similar demand should be made against Former Chief Justice Iftikhar Chaudhry & his son for scandals exposed by Malik Riaz Hussain. Here why we should leave former President Asif Zardari for similar accountability. Last but not least, why Mian Mansha from Corporate world should not be investigated for MCB sales & his latest scandal. I am proposing this with a simple thought that One PM, One Former Army Chief, One former Chief Justice, One former President Asif Zardari and one Corporate head if equally made accountable, the question  of discriminatory accountability will never be raised again. We will never be able to reform our society till we continue discriminatory accountability. Discriminatory accountability has always given & will give oxygen to Zardaris and Sharifs since such discrimination allow the perception of victimisation not accountability. I sincerely hope that Imran Khan demands equal & ruthless accountability of Nawaz Sharif & his family along with Former Army Chief General Kayani & his brothers, Former Chief Justice Iftikhar Chaudhry & his son, Former President Asif Zardari & his half brother and Mian Mansha. Such ruthless & equal accountability is the only option of our revival.

I met a Govt official who was victimised because of the actions of his brothers. This Govt official made a simple remark if I am accountable for the actions of my brothers, why General Kayani is not accountable for the billions made by his brothers in a few years through shady deals. Question is pertinent & if we fail to answer the question, forget accountability, make deals & run this country the way it is being run since 69 years.

Such ruthless but equal accountability will set the precedent for all top institutions of Pakistan.


پانامہ لیکس پر وزیر اعظم کا احتساب ترجیحی کاروائی کیونکر؟ 

احمد جواد

ہم سب کی خواہش ہے کہ پانامہ لیکس پر وزیراعظم کا احتساب ہو۔اس کے ساتھ سابقہ آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی اور ان کے بھائیوں کی اربوں روپے کی لوٹ مار کی تحقیقات کا مطالبہ بھی جوڑ دینا مناسب ہو گا۔ اسی طرح سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری اور ان کے بیٹے کے بارے ملک ریاض کے انکشافات  کے سکینڈل کے بارے بھی یہ مطالبہ کیا جا سکتا ہے۔سابق صدر آصف علی زرداری  کے لئےایسے احتساب سے کیوں گریز کیا جائے؟آخر میں کاروباری دنیا کے سرخیل میاں منشا سے مسلم کمرشل بینک کی فروخت اور حالیہ سکینڈل کے بارے تحقیقات کیوں نہ کرائی جائیں؟ میں ایک سادہ سا  خیال پیش کرتا ہوں  کہ ایک وزیراعظم، ایک سابقہ آرمی چیف، ایک سابقہ چیف جسٹس، ایک سابقہ صدر آصف علی زرداری اور کاروباری دنیا کے ایک بڑے کے یکساںاحتساب سے  ترجیحی تحقیقات کا اعتراض دوبارہ نہیں کیا  جا سکے گا۔جب تک ہم  بلاامتیاز احتساب جاری  نہیں رکھتے، ہم معاشرے کی اصلاح نہیں کر سکیں گے۔امتیازی احتساب سے ہمیشہ زر داریوں اور شریف برادران نے فائدہ اٹھایا ہے کیونکہ اس سے احتساب کا نہیں بلکہ سیاسی انتقام کا تاثر ابھرتا ہے۔میری عمران خان سے ہمدردانہ گزارش ہے کہ کہ میاں نواز شریف اور ان کے خاندان، سابق آرمی چیف جنرل اشفاق پرویز کیانی اور ان کے بھائیوں،سابق چیف جسٹس افتخار چودھری اور ان ک بیٹے، سابق صدر آصف زرداری اور ان کے لے پالک بھائی اور میان منشا کے کڑے احتساب کا مطالبہ کریں۔ایسا بے رحم  اور یکساں احتساب ہی ہماری بقا کی آخری چارہ جوئی ہے۔

اس طرح کے کڑے اور یکساں احتساب سے پاکستان میں ہمارے چوٹی کے  اداروں  کے لئے ایک اعلیٰ مثال قائم ہو جائے گی