Candid Talk by Imran Khan and twisted relay by GEO.

168

Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ”Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/ and can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


جیو کا عمران خان کی دو ٹوک گفتگو کو توڑ مروڑ کر پیش کرنا

احمد جواد

میں نے سوشل میڈیا پر عمران خان کا انٹر ویو بغور سُنا۔ مجھے عمران خان کی کھری کھری باتیں اچھی لگیں اوراس انٹر ویو میں خیبر پختونخوا کے بارے اُن کی باتوں کو میں سراہتا ہوں۔ تاہم ان باتوں کو جیو نے توڑ مروڑ کر پیش کیا۔جیو اور جنگ لاکھ تخت شاہی کی جنگ کا کھیل کھیلتے رہیں  مگروہ عمران خان کو اُس کی تیزسپیڈ، گھومتی گیندوں اور باؤنسروں سے باز نہیں رکھ سکیں گے۔جنگ اور جیو بیرونی ایجنڈے کا گڑھ بن چکے ہیں اور ان  کاخاتمہ لازماً عمران خان کے ہاتھوں  ہوگا۔ یہ خاتمہ بزور بازو نہیں بلکہ ان کی دم توڑتی شہرت اور زرد صحافت کی وجہ سے ضرور ہوگا۔

اس خاص انٹر ویومیں عمران خان نے جو کہا اُس کا مطلب تھا

مرکزی حکومت کے تجربے سے پہلے صوبائی حکومت کے تجربے سے گذرنا ہمارے لئے بہتر ثابت ہوا۔کیونکہ خیبر پختونخوا میں حکومت چلانے  کے تجربے سے ہمیں بہت کچھ سیکھنے  کا موقع ملا۔صوبائی حکومت کے تجربے کے بعد ہم وفاقی حکومت چلانے کے لئے ہم پہلے سے کہیں بہتر طور پر تیار ہیں۔

انہوں نے تسلیم کیا کہ اقتدار کے پہلے برس تو ہمیں معلوم نہیں تھا کہ حکومت کیسے چلانی ہے۔لیکن ہم نے یہ سب بہت جلد جان لیا اور ہم نے خیبر پختونخوا میں کئی کار ہائے نمایاں انجام دیئے۔

انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ کس طرح کراچی کے میئر نے خیبر پختونخوا جیسی مقامی حکومت قائم کرنے کی خواہش کا اظہار کیا۔عمران خان نے بر ملا اعتراف کیا کہ  صوبائی ارکان اسمبلی اور افسر شاہی کی رکاوٹوں کی وجہ سےمقامی حکومتوں کے نظام کے مطلوبہ ثمرات حاصل کرنے کے لئے ابھی کچھ وقت درکار ہے۔

لوگوں کو چاہئے کہ درج بالا عمران خان کے موقف اور جیو پر چلنے والے ٹِکروں کا موازنہ کریں اور خود فرق ملاحظہ فرمائیں۔

سچ ہمیشہ قائم رہتا ہے اور جھوٹا پراپیگنڈا اور اس کے کرنے والے جلد یا بدیر اپنی موت آپ مر جاتے ہیں۔بالکل اسی طرح جیسے عمران اپنے خلوص اور موقف کی سچائی کی وجہ سے قائم و دائم ہے۔


Candid Talk by Imran Khan and twisted relay by GEO.

By Ahmad Jawad

I listened the interview of Imran Khan on social media. I admired his candid talk and nothing appeared unusual during his talk on KPK until GEO gave it a twist of words. GEO/Jang may like to continue playing its game of thrones but they will fail to deter him from bouncers, indippers and his speed. GEO and Jang group which has become a hub of foreign agenda will have its death in the hands of Imran Khan, not by any force but by losing popularity among public due to its yellow journalism.

In this particular interview,what all Imran Khan meant was:

“It’s good that we did not have Federal Govt experience before KPK govt experience, since KPK experience has proved a very good learning opportunity and we will be much better off to run Federal Govt after the provincial experience.

He also accepted the fact that first year, we did not know much about how to run govt affairs but we learnt very fast to make some great achievements in KPK.

He also explained how Mayor Karachi desired to have a local government system like KPK. He candidly admitted that desired results from local body system will take time due to resistance from MPAs and bureaucracy.

Now public may like to read tickers and misreporting by GEO and compare it with above message of Imran Khan and see the difference.

Truth prevails, propaganda dies its own death & propagandist meet their fate sooner or later. This is how Imran Khan prevailed with the strength of truth & commitment.

Facebook Comments