China Leading Global Economic Initiatives – With Love from Ethopia.

376

By Ahmad Jawad


Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ” Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/. can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


A non democratic country by western definition, China, is not just leading the globe with his country’s development miracles within China, but leading in Africa, Europe and Asia with largest projects on earth. On one hand, Asia is looking forward to phenomenal growth patterns under ” One Belt, One Road”. London is receiving cargo train from China in 18 days covering 12000 km passing through Kazakhstan, Russia, Germany, Belgium and France.

In Africa, Some 750 kilometres (466 miles) long, the $4 billion line connects landlocked Ethiopia to the Red Sea coast in Djibouti.

Officially inaugurated last week after test runs kicked off in October, it is expected to cut the travel time between the Ethiopian capital Addis Ababa and the port in Djibouti from three days by road to 12 hours by rail.

Like a number of other planned lines it was partly funded and built by Chinese companies. It could soon link up with neighboring Sudan and Kenya — where the first part of a new $13 billion Kenyan railway connecting Mombasa to Nairobi is taking shape.
The sprawling network is planned to continue into South Sudan, Uganda, Rwanda and Burundi, as part of transnational efforts to connect countries within East Africa.


عالمی معاشی اقدامات میں چین کی سبقت

With Love from Ethopia

احمد جواد

مغربی اصطلاح کے مطابق غیر جمہوری چین نہ صرف چین کے اندر ترقی کے معجزے بپا کر رہا ہے بلکہ افریقہ، یورپ اور ایشیا میں کرہ ارض پر عظیم منصوبے لگا نے میں سب سے آگے ہے ۔ایک جانب ایشیا کی نظرمیں“ایک بیلٹ ایک سڑک” طرز پر ترقی کےعظیم ترین عالمی منصوبہ جات ہیں ۔چین سے چلنے والی بار بردار ریل گاڑی قازقستان، روس، جرمنی، بیلجیم اور فرانس سے ہوتی ہوئی بارہ ہزار کلو میٹر کا سفر طے کرکے اٹھارہ دنوں میں لندن پہنچنے لگی ہے۔

افریقہ میں چاروں طرف خشکی سےگھرے ملک ایتھوپیا کو چار ارب ڈالر لاگت سے تعمیر ہونے والی 750 کلو میٹر طویل ریلوے لائن جیبوتی میں بحیرہ احمر کے ساتھ ملائے گی۔نومبر میں آزمائشی سفر کی کامیابی کے بعد گذشتہ ہفتے سرکاری افتتاح کے بعد ایتھوپیا کے دارالحکومت ادیس ابابا اور جیبوتی کے درمیان بذریعہ سڑک تین دن کا سفر بذریعہ ریل بارہ گھنٹے کاسفر رہ جائے گا۔بہت سے منصوبوں کی طرح  جزوی اخراجات برداشت کرنے کے ساتھ اس منصوبے کی تکمیل چینی کمپنیوں نے کی۔جلد ہی اس پٹڑی کو پڑوسی ممالک سوڈان اور کینیا سے ملا دیا جائے گا جہاں پہلے ہی تیرہ ارب ڈالر کا ممباسا کو نیروبی سے ملانے کا اولین ریلوے منصوبہ رو بہ عمل ہے۔

اس پھیلتےہوئے نیٹ ورک کا مقصد جنوبی سوڈان، یوگنڈا، روانڈا سے گذرتے ہو ئے مشرقی افریقہ کے ممالک کوملانے کی کوششوں کو جاری رکھنا ہے

 

Facebook Comments