Concept of Smart Thinking Tank – By Ahmad Jawad

1670
.

 

Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ”Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/. And can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


سمارٹ تھنکنگ ٹینک کا تصوّر

احمد جواد

ریڈیو، ٹیلیویژن، اخبارات، تھنک ٹینک اور اشتہاری کمپنیوں سمیت میڈیا کی پانچوں اصناف کوناظرین، سامعین اور قارئین کو اپنی جانب مائل رکھنے میں مشکلات کا سامنا ہےکیونکہ ان میں سے کسی کے پاس سوشل میڈیا جیسی وسعت، جدّت، رفتار اور آسانی موجود نہیں۔ہم نے سمارٹ تھنکنگ ٹینک کے نام سے اطلاعات اور مواصلات کا نیا معیار تخلیق کیا ہے جس میں میڈیا کی پانچوں اصناف کے لوازمات یکجا ہیں جوریڈیو جیسی گرفت، الیکٹرانک میڈیا کی ویڈیو کا ذائقہ،پرنٹ میڈیا سے اطلاعات اور خبریں، تھنک ٹینک سے پالیسی اور تحقیق اورایڈورٹائزنگ انڈسٹری سے پیکر کی بہترین تصویر کشی کا حسین امتزاج ہے۔سوشل میڈیا کی اطلاعات کے دوش پر سوار پانچ ذائقوں کے سنگم کو سمارٹ تھنکنگ ٹینک کے نام سے موسوم کیا گیا ہے۔

روائتی میڈیا، روائتی تھنک ٹینک اور روائتی پبلسٹی ناکارہ  تو نہیں ہوئے مگر غیر مروجہ ہوتے جارہے ہیں

اب وقت آچکا ہے سمارٹ تھنکنگ کا

ڈیجیٹل انفارمیشن اور سوشل میڈیا نے مل کر خبر نشر کرنے کی رفتار کو کئی گنا بڑھا دیا ہے۔روائتی تھنک ٹینک اس ڈیجیٹل زمانے  سے ہم قدم ہو کر چلنے کے لئے تیار نہیں ہیں۔ تھنک ٹینک اگر ڈیجیٹل انداز  نہیں اپناتے تو ڈیجیٹل نسل1990ء کے بعد  ان کو سننے کے لئے تیار نہیں۔روائتی تھنک ٹینکس کو اس غرض کے لئے نئے انداز اپنانے کی ضرورت ہے

سوشل میڈیا کے ذریعےڈیجیٹل بورڈ پر نمودار ہونے والے تابڑ توڑ سوالات  کی ضروریات بڑی مستعدی سے پوری کر رہا ہے۔ان سوالات کا تقاضا ہے کہ تیز رفتار تحقیق کے طریقے اختیار کر کے ان کے جوابات بڑی سرعت سے دئے جائیں۔ہماری تھنک ٹینک کو تھنکنگ ٹینک میں ڈھالنےکی کاوش جس حقیقت پر مبنی  ہے اسی لفظ میں واضح ہے یعنی چوبیس گھنٹے بلا توقف خبروں کی ترسیل اور تحقیق کرنے والے فورم کی فراہمی جو سوشل میڈیا پر پوچھے جانے والےمسائل کا بڑی حد تک اورانتہائی برق رفتاری سے حل تجویز کر سکے۔

  لفظ تھنک کچھ کرنے کے لئے ایک کرخت سی ہدائت لگتی ہے جس میں عمل مفقود پایا جاتا ہے جبکہ تھنکنگ بذات خود ایک جاری عمل ہے اور یہی فرق ہے ہونے اور ہوتے رہنے میں۔تھنک میں تشکیک کا عنصر پایا جاتا ہے  کہ سوچا جائے گا بھی کہ نہیں جبکہ تھنکنگ میں شک کی گنجائش نہیں یعنی سوچنے کا عمل جاری ہے اور تیزی سے آگے بڑھ رہا ہے۔

روائتی میڈیا کے دور سے کام کرنے والی ایڈورٹائزنگ ایجنسیاں ایک مخصوص ذہن کے ساتھ اخبارات اور ٹی وی چینلز پر اشتہارات چلا رہی ہیں اور اشتہار بازی کی وہی روش سوشل میڈیا پر بھی جاری رکھے ہوئے ہیں۔ان کی تشہیری روش اب بھی وہی پہلے والی اور دقیانوسی ہے کیونکہ ان کے چلن کو ابھی اصل مسابقت سے پالا نہیں پڑا جس کی وجہ یہ ہے کہ وہ حکومتی فنڈ پر انحصار کرتے رہے ہیں جس کے لئے جدت نہیں خوشامد کی ضرورت ہوتی ہے۔اگر ہم اپنے اشتہارات  کے معیار کا پڑوسی ملک کےساتھ موازنہ کریں تو محسوس ہوگا کہ مارکیٹنگ جدت کیا ہوتی ہے۔بھارتی ایڈورٹائزنگ انڈسٹری پوری کی پوری صنعتی مسابقت پر مبنی ہے جبکہ ہماری ایڈورٹائزنگ انڈسٹری محض چاپلوسی پر زندہ ہے جس نے ہماری ایڈورٹائزنگ انڈسٹری میں جدت کےعنصر کو کچل دیا ہے۔

پرنٹ اورمیڈیا پر تشہیر کا پرانا انداز بور لگنے لگا ہےجس  کی وجہ سے توجہ کھوتے ہوئے ناظرین کی تعداد تیزی سے گھٹ رہی ہے اور یہ طریقہ کار تیزی سے پھیلتے سے بدلتے سوشل میڈیا پر ناکام رہا ہے۔ریموٹ کنٹرول تھامے ٹی وی کے ناظرین کے سامنےان کے بے بسی قابل رحم ہوتی ہے جب بور اشتہار آتے ہی وہ چینل بدل لیتے ہیں۔

دنیا تیزی سے بدل رہی ہے۔ہم دنیاکو بدلنے سے روک نہیں سکتے مگر ہم جدید خیالات سے اس تبدیلی کا حصہ بن سکتے ہیں۔


Concept of Smart Thinking Tank – By Ahmad Jawad

By Ahmad Jawad

All five mediums, Radio, Television, Print media, Think Tanks and Advertising Agencies are finding it difficult to maintain or hold the audience as neither of them can face the volume, diversity, speed and ease of Social Media

We have created a new standard of communication & Information “Smart Thinking Tank” which has merged the flavor of all five mediums. Smart Thinking Tank has the ease of outreach like radio, flavor of video from Electronic Media, News/Information from Print Media, Policy/Research from Think Tanks and image building from Advertising Industry.

Merger of five flavors have been placed on the fastest vehicle of information “Social Media” and concept has been named as “Smart Thinking Tank”

Traditional Media, Traditional Think Tanks & Traditional Advertising are not obsolete but getting obsolete.

Time for Smart Thinking

⇓ 

Digital Information and Social Media has multiplied the speed of information many folds. Traditional Think Tanks are not compatible or not yet ready to adjust with fast pace of digital era. A digital generation after 1990 will not listen to Think Tanks if they are not effective in digital mode. This requires a new methodology for traditional think tanks.

Smart Thinking Tank fulfills the needs of rapid questions appearing on “Digital Board” through social media. Such questions need to be answered or addressed with speed and rapid research methods.

Our transition from “Think Tank” to ” Thinking Tank” is based on the fact that the word “Thinking Tank” is 24/7 research and information forum addressing issues appearing on Social Media 24/7 with largest outreach and fastest speed.

The word “Think” is like an instruction, futuristic, more rigid & misses the action part. “Thinking” is continuous, full of action & current. It’s like a difference between “Happen” and “Happening“. Happen is like a doubt which ” May or May not” happen. Happening “is visible, clear, result and leaves no doubt. Think is a similar doubt which, “may or may not” think. Thinking is happening, doing, moving and progressing.

Advertising agencies from the era of traditional media worked on a typical mindset of advertising on a newspaper and TV channels. Now they stretch similar mindset towards social media. Their mindset of advertising is still the same and obsolete. Their mindset is not challenged by genuine competition but their reliance is more on Government funds, which does not require innovation but lobbying. If we compare quality of our Ads with next door neighbor we realize what actually is innovative marketing. Indian Advertising industry is based on sheer industrial competition whereas our advertising industry is based on sheer lobbying which kills the element of creativity in our adverting agency.

Traditional Advertising on Electronic and print media is now boring, fast losing audience, attention and unable to compete with new dynamics of Social Media, especially their helplessness against “Remote Control” of television is visible which allow viewer to change channel as soon as boring “Ads” appear.

World is changing, we cant stop world from changing but we can become part of change with new ideas.