Digital & Social Media and Mindset of General Understanding

1202

By Ahmad Jawad

Today, we frequently see videos, Images & message highlighting how Digital & Social Media has destroyed us.

Every technology used for communication & Entertainment, if used inappropriately, has dark sides. Starting from TV, VCR, Telephone, Camera, mobile, movies, Smart phone, Walkman, IPod, You tube, Facebook, Twitter, WhatsApp and many more.

Even a knife if not used with caution, it can cut your fingers. If a car is not driven properly, it can take your life.

Our national mindset is:

1. Concluding in general without precision.
2. Passing general statement without any specifics.
3. Having general understanding of a subject without making required research.

It is the same mindset FulBright Scholar Ihtesham
made a fun of himself & Pakistan in front of Christine Fair on a discussion of Kashmir in America. In the end, he just proved to be a FoolBright Scholar making records of viewing on Youtube.

As a Muslim in Pakistan, 95 % have never read Quran with translation but 100 % claim expertise on Islam.

99% has not read a single book on history other than syllabus, yet everybody is a historian.

Every subject whether technology, Politics, Social, economic, history become victim of  our mindset of general understanding.

Mindset of General understanding also reflect our shallowness as a national character. Such approach suits to our habit of convenience.

You do not need to be an expert to give an opinion, still one can attempt to do some homework. If One cannot do homework then at least learn to listen others for the cause of learning.

Are we aware about the revolution of communication, revolution of outreach, Revolution of awareness, Ease of knowledge, Miracle of Khan Academy, millions of Start ups around the globe bringing a new set of entrepreneurs, tremendous employment opportunities, Cost effectiveness, Economy of efforts, Revolution of monopoly breaking in every field, Revolution in education & many other amazing results.

Are we aware about the miracle of Google which has placed information of entire universes at one click.

Yes, we need to groom our digital generation how to keep balance between values & Digits.


اظہار خیال اور مضمون پر گرفت

احمد جواد 

ڈیجٹل اور سوشل میڈیا نے ہمیں کس قدر تباہ کردیا ہے اس کے بارے ہم بکثرت پیغامات ، تصاویر اور ویڈیوز میں ملاحظہ کرتے رہتے ہیں۔نشریات اور تفریح کے لئے کسی بھی ٹیکنالوجی کے غلط استعمال کےبرُے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔اس میں ٹی وی، وی سی آر، ٹیلیفون، موبائل فون، فلمیں، سمارٹ فون ، واک مین، آئی پیڈ، یو ٹیوب، فیس بُک، ٹویٹر اور واٹس اپ کےعلاوہ بہت کچھ شامل ہے۔ایک چاقو تک کا غلط استعمال آپ کی انگلیاں کاٹ سکتا ہے۔اگر کار کو ٹھیک طریقے سے نہ چلایا جائے تو آپ کی جان بھی جا سکتی ہے۔ہمارا قومی وطیرہ یہ ہے کہ:

 ۔ 1بالعموم حقائق کی چھان بین کے بغیر ہم نتیجہ اخذ کر لیتے ہیں۔

 ۔2حتمی تفصیلات کے بغیر ہم بیان جاری کردیتے ہیں۔

۔3مطلوبہ تحقیق کے بغیر ہماری معلومات سطحی ہوتی ہیں۔

یہی وطیرہ ہے جس کی وجہ سے امریکی Christine Fair  کے سامنے مسئلہ کشمیر پر بحث کرتے ہوئےفلبرائیٹ سکالر احتشام اور پاکستان کو تضحیک کا نشانہ بننا پڑا۔ وہ محض یو ٹیوب دیکھ دیکھ کر ریکارڈ بنانے والا فلبرائیٹ سکالر ثابت ہوا۔پاکستان میں   % 95 مسلمان قرآن کابا ترجمہ مطالعہ کئے بغیر اسلام کا مکمل احاطہ کرنے کا دعویٰ کرتے ہیں۔ نصاب کے علاوہ تاریخ کی کوئی کتاب پڑھے بغیر %99  لوگ تاریخ دان بنےپھرتے ہیں۔ٹیکنالوجی، سیاسیات، معاشرتی علوم، معاشیات اور تاریخ سمیت تمام مضامین ہماری عمومی سوچ کے وطیرے کی بھینٹ چڑھے ہوئے ہیں۔

ہمارا عمومی طرز فکر ہمارے قومی کردار کے کھوکھلے پن کو ظاہر کرتا ہے کیونکہ یہ طرز عمل ہماری تن آسانی   کی عادت کے عین مطابق ہے۔اظہار خیال کے لئےآپ کا ماہر ہونا ضروری نہیں پھر بھی کچھ تو مطالعہ کر لینا چاہئے۔اگر آپ ضروری مطالعہ نہیں کرسکتے توسیکھنے کے لئے کم از کم دوسروں کو سننا سیکھ لیں۔ہم ابلاغ کے انقلاب، دوسروں تک رسائی کے انقلات، آگاہی کے انقلاب، حصول علم میں آسانی، خان اکیڈمی کی کرامات اور کرہ ارض کے گردو پیش جنم لیتے کروڑوں کاروباریوں ، روزگار کے بے انتہا مواقع ، کم خرچ، کم محنت طلب، ہر شعبہ زندگی میں اجارہ داری کے خاتمے کے انقلاب، تعلیمی انقلاب اور دیگر بیش بہا فوائد سے بخوبی واقف ہیں۔کیا ہمیں گوگل کے معجزے کا ادراک  ہےجس نے سب جہانوں کا علم ایک کلک کی دوری پر رکھ دیا ہے؟ ہمیں فقط اپنی ڈیجٹل نسل کو اعداد اور اقدار میں توازن رکھنے کی تربیت دینی ہے۔