Freedom of Expression – A Hoax

732

By Ahmad Jawad
Written from a roadside of Munich.

Freedom of Expression is a hoax created by West. It’s basically Freedom of Information Warfare & Manipulation of Facts.

Media and Think Tanks are established tools of US & West to manipulate rest of the world. Since only US & West could establish presence of such medium, it’s freedom is the concern of them. Their tools become redundant if a country starts controlling them. China, Russia & Turkey have known the western trick & would control media & Think Tanks effectively & such approach gave them prosperity & stability. Freedom of express is a hoax created by West. It’s basically freedom of Information Warfare & manipulation of facts. Media traditionally is CNN, BBC, FOX, Newsweek, Times with other sidekicks  from Europe including international media organisation. The whole war of information warfare is apparently fought on basic values but manipulative agenda of US & West to keep the world under their control. Generally Local media very easily get influenced by the agents of International media through money, recognition, training, support, intellectual sharing and social calls. Imagine US & West have no objection to highly restricted freedom of expression in Saudi Arabia, UAE, Kuwait, Egypt, Qatar,  & other middle Eastern countries but they are too worried about the same in Russia, China & Turkey. In the past, they had concerns on Iran as well but not any more. It’s like a certificate of freedom of expression which US & West grant to countries in their control.

Recent rise of Russian TV RT, China TV CCTV & others is start of breaking monopoly of International mafia of Journalism.

I highly recommend well regulated media & Social Media in Pakistan in the best interest of Pakistan.

Security Clearance of media groups & journalist should be mandatory.

PTV should not be used for representing Government but It should be used internationally to represent Pakistan.


 

آزادی اظہار کا فریب

احمد جواد

آزادی اظہار مغرب کی طرف سے دیا گیا ایک فریب ہے جو ذرائع اطلاعات کی آزادانہ جنگجوئی اور حقائق پر قابو پانے کے لئے دیا گیا ۔امریکہ او ر مغرب میں میڈیا اور تھنک ٹینک جیسے ہتھیار پوری دنیا کو بس میں رکھنے کے لئے بنائے جاتے ہیں۔چونکہ یہ ادارے امریکہ اور مغرب ہی میں قائم ہیں اس لئے ان کی آزادی بھی ان کامعاملہ ہے۔جونہی کوئی دوسرا ملک ان پر دسترس حاصل کرتا ہے، ان کے ہتھیار بے کار ہو جاتے ہیں۔چین، روس اور ترکی مغرب کی چالبازی سمجھ گئے ہیں ۔میڈیا اور تھنک ٹینک پر موثر قابو پانے کے عمل  سے انہیں استحکام اور خوشحالی  نصیب ہوئی۔مغرب کا پیدا کردہ فریب میڈیا کی آزادی در اصل ذرائع اابلاغ کی کھلی جنگ ہے جس کے ذریعے وہ حقائق کو قابو میں رکھنا چاہتا ہے۔سی این این، بی بی سی، فوکس، نیوز ویک، ٹائمزاوران کے یورپی بچونگڑوں بشمول بین الاقوامی میڈیا تنظیم ہی کو میڈیا گردانا جاتا ہے۔امریکہ اور یورپ کی دنیا کو قابو میں کرنے کے مقاصد بنیادی اقدار کے حصول کی آڑ میں حاصل کئے جاتے ہیں۔ بین الاقوامی میڈیا کے  گماشتوں کےپیسہ، شہر ت  ،تربیت، حمایت، میل ملاپ اور ذہانت کے فروغ کے چکمے میں مقامی میڈیا بڑی آسانی سے آجاتا ہے۔ذرا تصور کیجئے کہ امریکہ اور مغرب کو سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، کویت، مصر ، قطر اور مشرق وسطیٰٰ کے دیگر ممالک میں اظہار رائے کی سخت پابندیوں سے کوئی غرض نہیں مگر روس، چین اور ترکی میں ان پابندیوں کے بارے بہت متفکر ہیں۔ماضی میں انہیں ایران کے بارے  ایسی ہی فکر لاحق تھی مگر اب  بالکل نہیں۔یہ وہ سرٹیفکیٹ ہے جو امریکہ اور مغربی ممالک اپنے زیر اثر ممالک کو عطا کرتے ہیں۔

حال ہی میں روس کے  RT ٹی وی، چین کے CCTV ٹی وی  و دیگر کا عروج بین الاقوامی صحافتی مافیا کی اجارہ داری کےخاتمہ کا نقطہ آغاز ہے۔ میری پُر زور رائے ہے کہ  پاکستان کے بہترین مفاد  کے لئے ذرائع ابلاغ اور سوشل میڈیا کڑے قوانین کے تحت  چلنے چاہئیں۔میڈیا گروپوں اور صحافیوں کی سکیورٹی کلیرنس کو یقینی بنایا جائے۔بین الاقوامی سطح پر پی ٹی وی کو حکمرانوں کی بجائے پاکستان کی نمائندگی کرنی چاہئے۔

Facebook Comments