TO WHOM IT MAY CONCERN – DON LEAKS.

1464
.

Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ”Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/ and can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


ڈان کو پکڑنا مشکل ہی نہیں نا ممکن ہے

احمد جواد

ادارے اپنے خفیہ عزائم اور مفادات کے لئے ایک دوسرے سے کھیل کھیلتے ہیں۔تاہم ہر کھیل ہار جیت کے بغیر ختم ہو جاتا ہے۔دو نوں ٹیمیں اسےقومی مفاد میں متفقہ حل قرار دیتی ہیں۔میچ کا ہار جیت کے بغیر ختم ہونا پہلے سے طے ہوتا ہےاس لئے اسے فکس میچ کہا جاتا ہے۔تماشائی فکس میچ دیکھنے کے عادی ہو جاتے ہیں اور اس طرح ہر میچ ہاؤس فل ہوتا ہے۔

ورلڈ ریسلنگ کے میچ عالمی طور پر فکس سمجھے جاتے ہیں تاہم یہ دنیا بھر میں مقبول ہیں۔پاکستانی قوم اداروں کے درمیان  اس طرح کی کُشتیاں دیکھنے کی عادی ہو چکی ہے ۔ایک فکس میچ تو ختم ہو چکا۔اگلا میچ کون سا ہوگا۔  جو بھی ہوگا جلد ہوگا۔ ایسے میچوں کی کوئی کمی نہیں۔

پاکستان زندہ باد


“DON ko Pakarna Mushkil Hi Nahi, Namumkin Hai”

By Ahmad Jawad

Institutions play games with each other based on hidden intentions and plans.Each game however ends in a draw.Both sides call it consensus and resolution in the name of national interest.A drawn match if happens,it’s part of game but if it is made to happen,it is a fixed match. Spectators have gone addicted to fixed match, that is why, every match goes house full.

World Wrestling Championship is globally known as fixed matches, yet it is watched all over the world. Pakistani nation has also got used to such wrestling matches of institutions. Another fixed match is over, what is next match? Coming soon! Public waiting anxiously.

Warning: No matter what,public must respect all national institutions in their best interest.