Our Media Warfare with India – Who is the winner? Why and How?

830
.

 

Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ”Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/ and can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


بھارت کے ساتھ ہماری میڈیا جنگ

فاتح کون؟  کیوں اور کیسے؟

احمد جواد

سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی بین الاقوامی عدالتِ انصاف کی دستاویزپڑھی جس کا عنوان تھا بھارتی  استدلال پرکلبھوشن کی سزائے موت کو روک دیا گیا۔جہاں تک میں سمجھا ہوں کہ اس کا مطلب یہ نہیں کہ بین الاقوامی عدالتِ انصاف نے سزائے موت کا روک دیا ہے کیونکہ اس میں صرف یہ بتایا گیا کہ بھارت نے اپنی درخواست میں کن قانونی دلائل کا سہارا لیا۔اس کو ماہر قانون دان بہتر طرز پر بیان کر سکتا ہے۔اسے کہتے میں میڈیا کی جنگ جس میں بہتر  اور موثّر بھارتی میڈیا کےمقابلے میں پاکستان کی پوزیشن کمزور ہے۔

میں نے کسی پاکستانی صحافی کو بھر پور تیاری کے ساتھ بھارتی عزائم بے نقاب کرتےشائد ہی کبھی دیکھا ہو۔ہمارا میڈیا بغیر تحقیق کئے زبانی جمع خرچ میں مصروف ہے۔ریٹائرڈ فوجی افسران کو میڈیا پر بلایا جاتا ہے جو گذشتہ 70 سال سے پرانی باتیں دہرائے چلے جا رہے ہیں۔ہی حال ہمارے تجزیہ نگاروں، اینکروں اور تھنک ٹینکوں کا ہے جو کشمیر بارے میڈیا  مہم پر یہی عمل دُہرائے جا رہے ہیں۔ ان کا ٹارگٹ زیادہ تر پاکستانی ناظرین ہوتے ہیں جنہیں زیادہ قائل کرنے کی  ضرورت  ہی نہیں۔ اصل ٹارگٹ تو انڈیا اور مقبوضہ کشمیر کے مسلمان اور بین الاقوامی رائے عامہ ہونی چاہیے ۔

مکمل تیاری، بھرپور تحقیق اور میڈیا جنگ میں مہارت کےحامل ڈاکڑ عامر لیاقت اس کی بہترین مثال ہیں۔ اگرچہ وہ ملکی معاملات پر اپنے نقطہ نظر کی بار بار تبدیلی کی وجہ سے متنازعہ ہو چکے ہیں۔پاکستان کو بھارتی میڈیا کے ساتھ جنگ کی مہم میں انہیں ایک بہتر ہتھیار کے طور پر استعمال کرنا چاہئے۔دوسری مثال بریگڈیئر (ر)سائمن شیرف کی ہےجو بہت اچھے محقق اور لکھاری ہیں۔ان کی تحقیق اور موضوعات سب سے بر تر رہے ہیں۔اگر ان کی صلاحیتوں کو  اس بڑے اور اعلیٰ پس منظر کے ساتھ منا سب فورموں پر استعمال کیا جائے تو وہ بھارتی پراپیگنڈہ کے لئے مہلک ثابت ہو سکتے ہیں۔ان کو چاہئے کہ اپنی نگارشات اردو میں تحریر کریں تاکہ زیادہ تعداد میں لوگ ان سے استفادہ حاصل کر سکیں۔

ہمارے میڈیا کی بھارتی مقبوضہ کشمیر، بین الاقوامی اور بھارتی سامعین کو متاثر نہ کر سکنے میں ناکامی کی اچھی مثال مسئلہ کشمیر ہے۔کیونکہ ہماری میڈیا رسائی کامخاطب ہمارے مقامی لوگ ہی رہے ہیں۔

نا اہل مقامی میڈیا، غیر مستحکم سیاسی حکومتوں، پرانے اور متروک تھنک ٹینکوں اور انتہائی بُری خارجہ پالیسی کی بدولت ہم  بین الاقوامی رائے عامہ کو ہموار کرنے میں ناکام ہوچکے ہیں۔


 

Our Media Warfare with India – Who is the winner? Why and How?

By Ahmad Jawad

After reading the document of ICJ being circulated on social media with a caption that ICJ has frozen the decision of Kulbashan Yadav death sentence on Indian plea, If I have correctly understood, there is no decision of freezing death sentence by ICJ in this document, it just mentions description of request made by India with legal explanation. A legal expert can explain it better.

This is called media warfare in which Pakistan is weak against effective and competent Indian media.

I have rarely seen a Pakistani journalist coming up prepared to expose Indian designs. Our media is more rhetoric less researched. Retired Armed Forces officers are invited on media who would only repeat what we have been listening since last 70 years. Our analyst, anchors and think tanks would be doing the same without ever realising which should be their target audience for Kashmir media campaign. All of them are addressing only local Pakistani population which does not need much convincing.

One of the examples of well prepared, well researched and highly competent in art of media warfare is Dr Amir Liaquat, though highly controversial due to his frequent changing stance in domestic affairs. Pakistan must use him as an effective tool of Media warfare against very effective Indian media campaigns.

Brigadier(Rtd) Simon Sharaf is another example of well researched analyst and writer. His research, analysis and theme is always outstanding and can be lethal against Indian propaganda if his talent is utilised in a bigger and higher scenario and forums. He also needs to write his articles in Urdu to address larger population.

Kashmir is a good example where our media has failed miserably to influence audience in India, Indian occupied Kashmir and internationally.Our local media accomplishment might be attributed only to local audience which never required any real challenge since everybody is broadly convinced on the issue of Kashmir within Pakistan.

The real challenge on Kashmir media policy always originated from three types of regions:

1. Population within India especially minorities.

2. Population within IHK.

3. World population especially in Middle East, UK, EU,Canada and America.

We failed miserably in reaching out to all three regions, thanks to incompetent local media, unstable political governments, orthodox and obsolete think tanks and poor foreign policy.