Miracles can be hopes, but not plans.

1107
.

Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ” Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/. can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


معجزوں سے امیدیں وابستہ مگر تدبیر ندارد

احمد جواد

معجزے رونما ہوتےرہتے ہیں مگر اس کا یہ مطلب نہیں کہ زندگی گذارنے کے لئے ان پر تکیہ کر لیا جائے۔پاکستان کا 27رمضان کو عالم وجود میں آناایک معجزہ تھا اور قائد اعظم کا ہماری قیادت سنبھالنا بھی ایک معجزہ تھا۔ان معجزات کے بعد شائد ہم نے یہ باور کر لیا کہ ملک کو معجزوں پرچلایا جاتا رہے گا۔ہم  ہرسانحہ کے بعد  گمان کرتے رہے کہ کوئی معجزہ ہمیں نجات دلائے گا۔ہماری تاریخ شاہد ہے کہ کئی معجزات رو نما ہوئے۔ہمارا ایٹمی قوت بننا ایک معجزہ تھا۔1992ء کا کرکٹ ورلڈ کپ جیتنا ایک معجزہ تھا۔ایدھی مجسم معجزہ تھے ۔شوکت خانم کینسر ہسپتال ایک معجزہ تھا۔کھیلوں کی دنیا میں جہانگیر خان اور جان شیر خان معجزے تھے۔1965ء کی جنگ میں فتح ایک معجزہ تھی۔60ء کی دہائی میں ملنے والی معاشی تیز رفتار ترقی  کی وجہ سے ملنے والی تکریم معجزہ سے کم نہیں۔تربیلا ڈیم بننا بھی معجزہ تھا اور حال ہی میں راحیل شریف بھی معجزاتی شخصیت تھے۔

یہ نادر کار ہائے نمایاں بلا شبہ معجزات میں شمار ہوتے ہیں کیونکہ ۔۔۔

قائد اعظم کے بعد ان جیسا کرشماتی رہنما ہمیں نصیب نہ ہوا۔پاکستان کے معجزاتی  وجود کی ہم حفاظت نہ کر سکے اور ہم نے آدھاپاکستان گنوا دیا۔ہم 1965ء کے بعد کوئی جنگ نہ جیت سکے۔ساٹھ کی دہائی کے بعدہم معاشی عروج اور ترقی حاصل نہ کر سکے، ہم تربیلا جیسا ڈیم نہ بنا سکے، نہ ہم 1992ء کےبعد کرکٹ ورلڈ کپ جیت سکے نہ ہم بعد میں سکواش کا عالمی مقابلہ جیت سکے۔ہم ایدھی اور عمران خان جیسے رفاہ عامہ کے مثالی افراد پیدا نہ کر سکے۔ہم تین ماہ میں راحیل شریف کی قیادت، وقار، کردار اور جرات کی میراث کو جاری نہ رکھ سکے۔

ہماری ہر کامیابی واقعاتاً ایک معجزہ  تھی جو دوبارہ رو نما نہیں ہوگا۔

ہماری ہر کامیابی کسی غیر معمولی شخصیت کی مرہون منت تھی  جو کبھی عظیم اداروں کی شکل اختیار نہ کر سکی۔

آپ ہماری توقعات کا تصوّر کیجئے کہ ہم امید رکھتے ہیں کہ سپریم کورٹ تین بار منتخب ہونے والے طاقتور وزیر اعظم کو مجرم قرار دے گی۔ہم توقع رکھتے ہیں کہ ایان علی کو کٹہرے میں لایا جائے گا۔ہم توقعات وابستہ کر لیتے ہیں کہ سویٹزر لینڈ سے پیسے واپس لائے جائیں گے۔ہم امید رکھتے ہیں کہ نیب طاقتوروں  کے گرد شکنجہ کس لے گا۔ہم تعلیم اور صحت کے شعبوں میں بہتری کی توقعات رکھنے لگتے ہیں۔ہمیں ڈاکٹر عاصم حسین پر مقدمہ چلنے کی امید رہتی ہے۔ہم چاہتے ہیں کہ دوسری مہذب اقوام کی مانند پانامہ لیکس کی تحقیقات ہوں گی۔سب سے بڑی غلط فہمی یہ کہ ہم عدالتوں سے انصاف کی توقع لگائے بیٹھے ہیں۔

پیارے ہم وطنو! معجزوں کی امید لگائی جا سکتی ہے مگر ان کو رونما نہیں کیا جاسکتا۔کارہائے نمایاں سر انجام دینے کے لئے سوچ بچار اور عملی جامہ پہنانے کے لئے سخت محنت درکار ہوتی ہے۔ اس کے لئے ہمارا ایماندار ہونا لازم ہے۔ہمیں با کردار اور بلند نگاہ کی حامل قیادت چاہئے۔اس کے لئے ہمیں متحد ہونا ہوگا، تعلیم یافتہ اورصحت مندو توانا ہونا ہوگا۔

پاکستان  ایک معجزے کے طفیل وجود میں آیا تھا مگر یہ اقوام دنیا میں بدستور باوقار رہنے کا معجزہ نہ دکھا سکا۔کچھ لوگوں کے نزدیک پاکستان سب سے کرپٹ ملک کے طور پر قائم ہے اور کچھ لوگوں کے لئے بدنام ترین ملک کی مانند باقی ہے۔میرے نزدیک یہ بقا نہیں بلکہ باعث  شرم ہے،یہ وجودنہیں  فنا ہے۔ 


Miracles can be hopes, but not plans.

By Ahmad Jawad

Miracles happen but miracles are never  meant to be tools of dependence to run our lives. Pakistan coming into existence was a miracle on 27 Ramadan and Quaid Azam was also a miracle to lead us. After these miracles perhaps we thought country might be run on miracles. After every mishap, we hoped to be rescued by a miracle. We did have some more miracles in our history. Becoming Nuclear power was a miracle. Winning 1992 World Cup was a miracle. Edhi was a miracle. Shaukat Khanum Cancer Hospital was a miracle. Jehangir Khan & Jansher were miracles in sports. Winning 1965 war was a miracle. Economic boom & glory in 60s was a miracle. Tarbella  Dam was a miracle and recently Raheel Sharif was a miracle.

Why all such rare feats are miracles because ….

We could not have another leader like Quaid Azam, we could not sustain miracle of Pakistan, we lost half of Pakistan, we could not win a war after 1965, we could never have economic boom & glory after 60s, we could never make a dam like Tarbella  Dam, we could never win World Cup again, we could never win in squash again, we could not produce philanthropist like Edhi and Imran Khan again. We could not even sustain the legacy of leadership, dignity, character and courage of Raheel Sharif even for 3 months.

Each of our success is indeed a miracle never to happen again.

Each of our success is all about a few outstanding individuals but never result into  outstanding institutions.

Now imagine our expectations, we hope third time powerful PM to be convicted by Supreme Court, we expect Ayan Ali to be convicted, we expect Swiss money to come back, we expect NAB to apprehend powerful, we expect education and health to improve, we expect Dr Asim to be convicted, we expect Panama Leaks to be treated like civilised nations and most grossly mistaken, we expect Courts to provide Justice.

My Dear Nation, Miracles can be hopes but they cannot be plans. To have plans and execution, we have to work hard, we have to be honest, we have to be led by leaders with character & vision, we have to be united, we have to educated, we have to be healthy.

Pakistan coming into existence may be a miracle, but Pakistan growing as an honourable country in the world league cannot be a miracle. For some Pakistan surviving as one of the most corrupt country or as one of worst reputed country is still survival. For me, it’s not a survival, it’s a shame. It’s not a existence, it’s a collapse.