Mosque was not just a Mosque in Ottoman Empire

2628
.

By Ahmad Jawad BTH

Popularly known as Blue Mosque is actually named as Sultan Ahmed Mosque at Istanbul Turkey. It was built by Sultan Ahmed 1 who ruled from the age of 14 years & died at the age of 28 years. He worked as a labourer in the construction of mosque. Turkish mosques during the rule of Ottoman Empire were not just Mosques, it would include hospital, educational Institution, Food Street, Shops, Scientific research centre, Royal family premises, Hamams & many other activities.It was basically a hub of religious, cultural, trade, Social Hub of society. Even today similar model is exercised at this grand historical mosque by Turkish people. If you make religion too scared, it stays away from our daily life but if we mix religion with way of life, religion becomes more practical.


سلطنت عثمانیہ میں مسجد محض ایک مسجد نہ تھی

احمد جواد

ترکی کے شہر استنبول میں سلطان احمد کے نام پر بنائی جانے والی مسجد نیلی مسجد کے نام پر مشہور ہے۔اس کو سلطان احمد اوــل نے بنوایا جنہوں چودہ سال کی عمر سے 28برس کی عمر میں انتقال کرنے  تک حکومت کی۔انہوں نے اس مسجد کی تعمیر میں مزدور بن کر کام کیا۔عثمانیہ عہد میں نہ صرف مسجدیں ہوتی تھں بلکہ ان کے ساتھ ہسپتال، تعلیمی ادارے، کھانے کے بازار، دوکانیں، سائینس کے تحقیقی مراکز، شاہی محلات، حمام اور بہت سی ضروری مصروفیات ملحق ہوتی تھیں۔ یہ بنیادی طور پر مذہبی، ثقافی اور تجارتی مصروفیات کا گڑھ ہوتا تھا۔اس عظیم تاریخی مسجد میں ترک عوام کو آج بھی یہ سہولیات میسر ہیں۔اگر ہم مذہب کو ضرورت سے زیادہ مقدس بنا دیں گے تو یہ ہماری روزمرہ زندگی سے دور ہوتا جائے گا۔اگر ہم مذہب کو روز مرہ زندگی کا حصہ بنا لیں تو یہ زیادہ قابل عمل بن جائے گا۔