We are not Traitors, we are Guardians of Democracy

887

By Ahmad Jawad


Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ” Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/


We are not traitors, we are guardian of democracy & India is just helping us in preserving democracy against our joint enemy ” Pakistan Army”. We may be Shia & Sunni in religion but we are just democrats when it comes to choice of system & our common enemy is Pak Army. Democracy gives us justice at our door step, it gives us visionary leaders to lead us towards prosperity with the power of vote, it blocks leaders like Asghar Khan, it gives us merit at every stage of life, it gives us only 50 % people under poverty alleviation, it gives us electricity at least half a day, it gives us Gas during entire summer, it gives us water bowser if water is short, it gives us freedom to get through any impossible task just by a small bribe, it gives us degrees without education, it gives us opportunity to become rich in a fastest way in the world without paying tax, it allows a meter reader to become opposition leader & billionaire without any skill, it allows to own a political party with all voters intact just through a fake will of deceased wife, it allows you to rule the country if you have the experience of selling black tickets at a cinema, it allows you to transfer a Parliament seat to next generation within family like a personal property, it gives you fresh leadership after every 30 years with new faces from the same authentic family, it allows you to sit in Parliament without education & without paying tax, it allows you to talk against Government every day in evening talk shows to give a mass peaceful sleep to entire nation every night. Only country in the world which does not need sleeping pills, since nation is in deep sleep indefinitely. Anybody getting impatient for not getting  fruits of democracy must wait at least 100 years, fruits will reach to your door step, if not you, it may be your next generation, or next to next generation. Any delay in fruits of democracy getting late is because we got only 40 years of democracy out of 69 years. Our heaven in this world is democracy, we may not even need any more heaven in Afterlife.


ہم غدار نہیں، ہم جمہوریت کے محافظ ہیں

احمد جواد

 ہم غدار نہیں، ہم تو جمہوریت کے محافظ ہیں اور بھارت ہمارے مشترکہ دشمن پاکستانی فوج کے خلاف جمہوریت مستحکم کرنے میں ہماری مدد کر رہا ہے۔ مذہبی طور پر ہم شیعہ ہوں یا سُنی، لیکن صرف جمہوریت پسند ہیں۔ جب نظام کے چناو کا معاملہ ہوتا ہے تو ہماری مشترکہ دشمن پاک فوج ہوتی ہے۔ جمہوریت ہمیں گھر کی دہلیز پر انصاف فراہم کرتی ہے۔ یہ ہمیں جہاندیدہ راہنما عطا کرتی ہے جو ووٹ کی طاقت سے ہمیں خوشحالی سے ہمکنار کرتے ہیں۔ جمہوریت اصغر خان جیسے لیڈروں کا راستہ روکتی ہے اور زندگی کے ہر مرحلے پر اہلیت کو ترجیح دیتی ہے۔ جمہوریت میں صرف 50 فیصد لوگ خط غربت سے نیچے زندگی گذارتے ہیں۔ یہ ہمیں کم از کم آدھے دن کے لئے بجلی فراہم کرتی ہے، پوری گرمیوں میں گیس دستیاب کرتی ہے اور پانی کی کمی کی صورت میں ٹینکیوں کے ذریعے پانی مہیا کرتی ہے۔ جمہوریت میں ہم آزادی سے رشوت دے کر نا ممکن کام کر ڈالتے ہیں۔ یہ ہمیں تعلیم حاصل کئے بغیر ڈگریاں دیتی ہے۔ یہ ہمیں ٹیکس دیئے بغیر برق رفتاری سے قلیل وقت میں امیر کبیر بننے کا موقع فراہم کرتی ہے۔ یہ کسی بھی بےہنر میٹر ریڈر کو ارب پتی اور اپوزیشن کا رہنما بنا دیتی ہے۔ جمہوریت مرحومہ بیوی کےجعلی وصیت نامے سے پورے ووٹوں سمیت سیاسی پارٹی کا مالک بنا دیتی ہےاگر آپ کو سنیما ٹکٹ بلیک میں فروخت کرنے کا تجربہ ہے تو ملک پر حکومت کرنے کا اختیار دے دیتی ہے۔ جمہوریت میں آپ ذاتی جاگیر کی طرح پارلیمانی سیٹ اپنے خاندان میں اگلی نسل کو منتقل کر سکتے ہیں۔ یہ ہر 30سال بعد موجودہ معتبر خاندانوں میں سے نئی قیادت فراہم کرتی ہے۔ اس کے ہوتے ہوئے آپ تعلیم حاصل کئے بغیر اور ٹیکس ادا کئے بنا اسمبلی میں بیٹھ سکتے ہیں۔ جمہوریت میں آپ روزانہ شام کے ٹاک شوز میں حکومت کے خلاف باتیں کرکے عوام الناس کو اجتماعی نیند سلا سکتے ہیں۔ قوم چونکہ مدتوں سے سکون کی نیند کے مزے لے رہے ہیں  اس لئے یہ واحد ملک ہے جسے خواب آور گولیوں کی ضرورت نہیں۔ اگر کوئی بے صبرا جمہوریت کے ثمرات کے لئے بے چین ہو رہا ہے تو  اسے 100 سال تک انتظار کرنا ہوگا۔ اس کے بعد یہ ثمرات آپ کی دہلیز پر پہنچا دئے جائیں گے۔ آپ زندہ نہ بچے تو آپ کی اگلی نسل یا اس سے اگلی نسل تک پہنچ جائیں گے۔جمہوریت کے فوری ثمرات نہ ملنے کی وجہ یہ ہے کہ 69 سالوں میں سے ہمیں جمہوریت کے لئے صرف 40 سال ملے۔ اس دنیا میں جمہوریت ہی ہماری جنت ہے اور زندگی کے اختتام پر شاید کسی اور جنت کی ہمیں ضرورت نہ رہے۔

Facebook Comments