A personal experience with Imran Khan

1844
.

Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ”Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/ and can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


عمران خان کے ساتھ لین دین کامیرا ذاتی تجربہ

احمد جواد

جمائمہ خان کی کچھ ٹویٹس میری نظروں سے گذریں جن میں انہوں نے وضاحت کی کہ کس طرح انہوں نے بنی گالا میں عمران خان کو زمین کی خریداری کے لئے رقم ادھار دی۔ بعد میں عمران نے اپنا لندن کا فلیٹ بیچ کروہ رقم واپس لوٹا دی۔اس سے مجھے عمران کے ساتھ چند سال پہلے کا ذاتی لین دین کا تجربہ یاد آگیا جس سے مجھے ان کے کردار کی مضبوطی، پاس عزت اور وعدے کی پاسداری کا اندازہ ہوا۔

ء۲۰۰۹ میں مجھے عمران خان کے ہمراہ ایک سیمینار میں شرکت کے لئےجرمنی کے شہر برلن جانے کا اتفاق ہوا۔کسی ہم سفر کی شخصیت کےبارے جاننے کے لئے اس کے ہمراہ سفر کرنا بہترین  وسیلہ ہوتا ہے۔

ہم دونوں ایک ہی ہوٹل میں قیام پذیر تھے۔عمران خان  ہمیشہ ہلکے پھلکے سامان  کےہمراہ سفر کرتے ہیں۔وہاں کچھ چیزوں کی ضرورت پڑی تو انہوں نے مجھے سیف اللہ نیازی سے رابطہ کرکے ان کے اے ٹی ایم کا پن کوڈ معلوم کرنے کا کہا تاکہ مطلوبہ اشیا کی خریداری کے لئےکچھ کیش مل سکے۔میں باہر گیا اور ضرورت کی چیزیں لا کر عمران خان کو دے دیں ۔سیمینار کے اختتام کے بعد میں مہینہ بھر سفر میں مصروف رہا ۔دو ماہ بعد بنی گالا میں عمومی معاملات پر تبادلہ خیال کے لئے ہماری ملاقات ہوئی۔ ملاقات کے بعد جوں ہی میں نے رخصت چاہی عمران خان نے مجھے رُکنے کو کہا اور اپنے کمرے میں جا کرمیرے نام 60پاؤنڈ کا چیک لئے ہوئے نمودار ہوئے۔انہوں نے مجھے یاد دلایا کہ یہ اُن اشیاء کی رقم ہے جو میں نے برلن سیمینار کے دوران اُن کے لئے خریدی تھیں۔مجھے ان کے احساس تفاخر  اور چھوٹی چھوٹی باتوں کو یاد رکھنے پر بڑی خوش گوار حیرت ہوئی کہ وہ دوستوں  اور ساتھیوں کا ذرا سا احسان اٹھانا پسند نہیں کرتے۔اس سے ان کے کردار کی مضبوطی کا اندازہ ہوتا ہے۔

شریف خاندان کے میگا کرپشن  کے سکینڈل سے جو سیاسی مخالفت کی وجہ سے نہیں بنا بلکہ ذمہ دار بین الاقوامی اداروں کی تحقیق کے نتیجے میں منظر عام پر آیا ہے اس سے  لوگوں کی توجہ ہٹانے کے لئے  آجکل کچھ بد کردار افرادعمران خان کی کردار کشی میں جُتے ہوئے ہیں۔

عمران اُس قوم کو خبرادار کرتے چلے آ رہے ہیں  جو یہ بھول چکی کہ حد سے بڑھی ہوئی بد عنوانی اس کی پہچان بن چکی ہے۔کرپٹ قیادت نے رشوت ستانی کا زہر ہمارےمعاشرے کے رگ و پے میں اتنی گہرائی تک سمو دیا ہے کہ ہم اس مہلک مرض کے اثرات  سے مبرّا ہو چکے ہیں۔


A personal experience with Imran Khan

By Ahmad Jawad

I came across a few tweets of Jemima Khan in which she explained that how she lent money to Imran Khan to purchase land at Bani Gala and later Imran Khan returned the same by selling his London flat.

This reminded me, my own personal experience with Imran Khan some years back which explains his strong character, commitment and sense of honour.

I was travelling with Imran Khan to attend a seminar at Berlin Germany in 2009. Travelling with somebody is the best way of knowing a person.

We were staying in the same hotel. Since Imran Khan always travels very light, so he was short of some essentials, he requested me to get the PIN code of his ATM from Saif Ullah Niazi to draw some cash to purchase the essentials. Instead, I went out and purchased the items and gave it to Imran Khan. After the seminar, I was on travelling for a month or so. We again met after about two months at Bani Gala for a routine matter, after the meeting I was about to leave, Imran Khan asked me to stay back and went inside his room and came back with a 60 £ cheque. He reminded me it was for those items I purchased for him during Berlin Seminar. I was pleasantly surprised over his remembrance even for a minor favour and his sense of honour that he never takes even small favours from his friends and colleagues. This shows character of a person.

Today, some dirt characters are trying to malign him to distract public attention from mega corruption scandal of sharifs, exposed not under any local political enmity but exposed by credible international forum.

Imran Khan is a reminder to our nation who forgot that corruption is most unethical trait of our society. Corrupt leaders basically spread corruption so deep in our society that we have gone immune to this most deadly disease.