Question not Judgment

557

By Ahmad Jawad


Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ” Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/


 

Watch Hamid Mir video in Bangladesh.

Question is “How should we measure the loyalty & patriotism of a Journalist who becomes heroes of foreign hostile countries with awards & appreciations”? It’s a question we should ask ourselves when we see these journalist appear on Prime Time of television.

Another question is related to murder of Khalid Khawaja in the custody of Taliban. In this video, Hamid Mir is talking to Taliban on a phone call & convinces the Taliban that Khalid Khawaja is a CIA agent. As a result Khalid Khawaja is killed in the custody of Taliban. Hamid Mir & likes of him often taunt that we are labelled as agents of foreign agencies despite our loyalty to our motherland.

Question is ” How Hamid Mir can declare a Pakistani as CIA agent merely on his judgment & that too in a scenario when Khalid Khawaja was in in custody of Taliban.

Question is also ” Is it not tantamount to murder”?

Last question is ” Does It qualify under Freedom of Expression”.

Watch two videos of Hamid Mir talking to Taliban

 


 

 

فیصلہ نہیں سوال

احمد جواد

بنگلہ دیش میں حامد میر کی ویڈیو دیکھئے

سوال یہ ہے کہ دشمن ملکوں میں ایوارڈ اور داد و تحسین پاکر ہیرو بننے والے صحافی کی حب الوطنی اور وطن سے وفاداری کو ہم کس طرح پرکھیں گے؟یہ سوال خود سے ہمیں اس وقت پوچھنا ہے جب وہ صحافی پرائم ٹائم میں ٹی وی پر نمو دار ہوتا ہے۔

ایک اور سوال طالبان کی حراست میں خالد خواجہ کی ہلاکت کے متعلق ہے۔اس ویڈیو میں حامد میر ٹیلیفون پر طالبان کو قائل کرلیتے ہیں کہ خالد خواجہ سی آئی اے کے ایجنٹ ہیں ہے۔جس کے نتیجے میں خالد خواجہ کو طالبان کی تحویل میں قتل کر دیا جاتا ہے۔اس پر بھی حامد میر جیسے لوگ  طعنہ دیتے ہیں کہ مادر وطن سے وفاداری کے باوجود ہم پر  بیرونی طاقتوں کےآلہ کار ہونے کا ٹھپہ لگا دیا جاتا ہے۔

سوال یہ ہے کہ جب خالد خواجہ طالبان کی تحویل میں تھےحامد میر نے محض اپنے قیاس سے کس طرح ان کے سی آئی اے کا ایجنٹ ہونے کافیصلہ کردیا۔

ایک اور سوال یہ کہ کیا یہ فیصلہ قتل کے مترادف نہیں؟

آخری سوال یہ کہ کیا یہ آزادی اظہار کے معیار پر  پورا اترتا ہے؟

حامد میر کی طالبان سے گفتگو کرتے ہوئے دو ویڈیو ملاحظہ فرمائیں

 

Facebook Comments