Rad Ul Fassad and Zarb Azab – Few Questions.

1396
.

 

Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ”Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/ and can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


رد الفساد اور ضرب عضب – چند سوالات

احمد جواد

ایک عام پاکستانی کو ردالفساد اور ضرب عضب دونوں فوجی اپریشنوں کی مبادیات کا تو شائد علم نہیں ہوگا تاہم اُسے اپنی آنکھوں کے سامنے دونوں فوجی کاروائیوں میں کچھ واضح فرق نظر آتے ہیں

 ایک- ضرب عضب کے دوران ایان علی، ڈاکٹر عاصم حسین، شرجیل میمن، حامد سعید کاظمی اور  عزیر بلوچ گرفتار ہوئے اور ان پر مقدمات قائم ہوئے۔اپریشن رد الفساد کے دوران ان لوگوں کو رہائی ملی، انہیں ہار پہنائے گئے اور ہیرو کا درجہ دیا گیا۔جو لوگ ابھی تک جیلوں میں بند ہیں ان کی رہائی کے  بھی امکانات بڑے روشن ہیں۔

دو- ضرب عضب کے دوران قومی سلامتی کے حوالے سے ڈان لیکس انتہائی اہم موضوع رہا اور  ردالفساد کے دوران اس کا ذکر تک سُننے میں نہیں آتا۔

تین- ضرب عضب کے دوران سرحدی جھڑپیں بار بار چھڑ جاتی تھیں جب کہ رد الفساد کے دوران بھارت کی طرف سے سرحدی جھڑپیں نہ ہونے کے برابر ہیں۔

چار- ضرب عضب ک دوران زرداری صاحب پاکستان داخل نہیں ہو سکے تھے اور اپریشن رد الفساد کے دوران وہ یہاں بھنگڑے ڈال رہے ہیں۔

پانچ- ضرب عضب کے دوران بھارتی خفیہ ایجنسی را  کا کرداراور کلبھوشن  کی موجودگی دہشت گردی کے حوالے سے سب سے زیادہ موضوع بحث رہے۔ردالفساد کے زمانے میں کلبھوشن کا ذکر تو سننے میں آیا مگر پاکستان میں دہشت گردی کے حوالے سے را کے کردار کے بارے مکمل خاموشی اختیار کر لی گئی۔

چھ – آپریشن ضرب عضب کے دوران ملنے والی کامیابیوں کے  بارے سب لوگ آگاہ تھے مگر رد الفساد کے بارے شاید ہی کوئی خوشخبری سننے کو ملی ہو۔

سات – آپریشن ضرب عضب کے دوران قومی ایجنڈے کو فروغ دینے کے لئے سوشل میڈیا کا بڑے پیمانے پر استعمال کیا گیا مگر ردالفساد کے دوران سوشل میڈیا بطور میڈیم اب ترجیح نہیں رہا۔

آٹھ – ضرب عضب کے دوران آرمی چیف کی مضبوط باڈی لینگویج سے بڑے اچھے نتائج مرتب ہوئے جب کہ ردالفساد میں یہ عنصر نظر نہیں آتا۔

عام آدمی چونکہ دانشور نہیں ہوتا اس لئے اس کی سوچ بھی سطحی ہوتی ہے تاہم اُسے واضح فرق پھر بھی محسوس ہو رہا ہے


Rad Ul Fassad and Zarb Azab – Few Questions.

By Ahmad Jawad

An ordinary Pakistani may not know and understand the operational dynamics of two military operations, yet he sees some differences between two military operations in his own eyes.

1. During Zarb Azab, Ayan Ali, Dr Asim, Sharjeel Memon, Hamid Saeed Kazmi, Uzair Baloch were arrested and tried. During Rad Ul Fassad, all of them have been released, garlanded and made heros. Those who are still in jail,has high chance of making it out of jail.

2. In Zarb Azab, Dawn Leaks is a subject of great importance of national security. In Rad Ul Fassad, Dawn Leaks is never heard.

3. In Zarb Azab, border clashes by India were frequent, In Rad Ul Fasad, hardly any border clashes by India.

4. In Zarb Azab, Zardari could not enter Pakistan, in Rad Ul Fassad, Zardari rocks.

5. In Zarb Azab, role of Raw & kulbashan in Terrorism were top subject. In Rad Ul Fassad, only heard once about Kulbashan and hardly any mention of RAW’s role in terror activities in Pakistan.

5. In Zarb Azab, strong political figures were apprehended as facilitator of terrorism. In Rad Ul Fassad, it seems there is no financier and facilitator of terrorism.

6. In Zarb Azab, people got to know what are the accomplishment of operation. In Rad Ul Fassad, we hardly hear anything like that.

7. In Zarb Azab, social media was used extensively to dominate the role of agenda based media. In Rad Ul Fassad, social media is not priority as a medium.

8. In Zarb Azab, we see the strong impact of a strong body language of Army Chief in times of crisis. In Rad Ul Fassad, same is missing.

Ordinary citizen has ordinary thinking, he is not intellectual, he just sees and feels the difference.