SSP NEKOKARA.

1564
.

 

Writer is Chief Visionary Officer of World’s First Smart Thinking Tank ”Beyond The Horizon” and most diverse professional of Pakistan. See writer’s profile at http://beyondthehorizon.com.pk/about/ and can be contacted at “pakistan.bth@gmail.com”


ایس ایس پی نیکو کارا

نیند مبارک  ۔ جب اسے عوامی حقوق کا احترام کرنے پر سزا دی گئی تو قوم اور میڈیا دو سال تک میٹھی نیند کے مزے لیتے رہے

احمد جواد

ایس ایس پی نیکو کارا نے پی ٹی آئی اور پاکستان عوامی تحریک کے دھرنوں میں احتجاج کرنے والوں کے خلاف طاقت کا استعمال کرنے سے انکار کر دیا تھا۔انہیں حکومت کی طرف سے نوکری سے برخواست کردیا گیا۔دو سال گذرنے کے بعد حال ہی میں انہیں حکومت نےنوکری پر بحال کر دیا ہے۔

سوال یہ ہے کہ کیا میڈیا، سوشل میڈیا، سول سوسائٹی اور قوم نےپچھلے دو سال میں اصولی موقف پر پیش کی گئی ان کی  قربانی کو کبھی یاد بھی کیا ہے؟انہوں نے پچھلے دو سال میں تنخواہ کے بغیر ذہنی اذیت کا سامنا کرتے ہوئےبے روزگاری کا سامنا بھی کیا ہوگا؟ذرا تصور کیجئے دو سالوں میں  ان کا خاندان کس قدراذیت سے گذرا ہوگا ؟  

کیا آئندہ کوئی  سرکاری اہل کار اصولی موقف پر ڈٹ جانے کی جرات کرے گا؟

جب کوئی سرکاری ملازم عوام کا ساتھ دے تو ہمیں کیا کرنا چاہئیے؟

جب کوئی اس طرح کی جرات کا مظاہرہ  کرے تو کیا ہمارا فرض نہیں   کہ اُس کو ظالم حاکموں کے ہاتھوں ضائع نہ ہونے دیں؟


SSP NEKOKARA.

While he was penalised for respecting public rights,

Media and nation had a good sleep for two years. Happy sleep.

By Ahmad Jawad

SSP Nekokara refused to use force against protestors of PTI and PAT during 120 days Sit in. He was dismissed from service by the government. He has been now reinstated after two years by the government.

Question is ” Did media, social media, civil society and nation remembered his sacrifice and principle stand during last two years. He must have spent last two years without a job, without salary and mental torture. Imagine what his family might have gone through in these two years.

Will any civil servant dare again to stand with public or stand on principles?

What is our duty when such a civil servant is victimised for standing with his people?

Is it not our duty to help such daring person so that he is not lost against a tyrant rule?